سال کے آغاز میں ریلیز ہونے والی فلمیں فلاپ کیوں ہوتی ہیں؟

ہر سال نئے سال کے آغاز کے ساتھ ہی کئی فلمیں ریلیز ہوتی ہیں ، مگر وہ زیادہ بزنس نہیں کر پاتیں ، اکثر فلاپ ہو جاتی ہیں ۔
اس سال بھی نئے سال کے پہلے ہفتے میں فلمی ستارے اپنی فلموں کاپروموشن کر رہے ہیں۔شاہد کپورنے ڈائریکٹر وشال بھاردواج کی فلم ’رنگون‘ کی ۶؍ جنوری کو ریلیز ہونے کی اطلاع ٹویٹ کر دی ہے۔
اکشے کمار اپنی بیوی ٹوینکل کھنہ کے ناول پر مبنی فلم کو سا سال ریلیز کرنے کی بات کر رہے ہیں ۔
دلچسپ بات یہ ہے کہ اب کے ایک بھی نئی فلم ریلیز ہوتی نظر نہیں آئی، جس کی وجہ شاید فلم کے فلاپ ہوجانے کا بالی ووڈ کو وہم یا خوف ہے۔
اسی وجہ سے کوئی بھی ڈیولپر سال کے پہلے جمعہ پر اپنی فلم ریلیز نہیں کرتا ہے اور جو فلمیں ریلیز ہوتی بھی ہیں تو وہ اچھا بزنس نہیں کر پاتیں۔
گزشتہ اعداد و شمار کے مطابق سال 2007 سے اب تک سال کے پہلے جمعہ پر ریلیز ہونے والی فلموں میں صرف ’نو ون كلڈ جیسیکا‘ نے ہی اچھا بزنس کیا۔سال کے پہلے جمعہ کو ریلیز ہونے والی فلموں کے سال نو کے پہلے ہفتے میں ریلیز ہونے والی فلموں کے فلاپ ہونے کی وجوہات ہو سکتی ہیں ، ایک تو یہ کہ عوام نئے سال کی آمد کا جشن دوسرے انداز سے مناتے ہیں ۔۳۱؍ دسمبر کی رات کا جشن منانے کے ساتھ نئے سال کے جشن کا نشہ ہوتا ہے ، ایک ہفتے تک فلموں کو ناظرین نہیں مل پاتے ۔دوسرے یہ کہ اس دوران فلم کے پروموشن کے لیے فلمی ستارے بذات خود موجود نہیں ہوتے ہیں۔
دسمبرکے آخری عشرے میں بالی ووڈ کے ساتھ ساتھ ہر جگہ چھٹی کا ماحول ہوتا ہے اور فلموں کی صحیح انداز سے مارکٹینگ نہیں ہو پاتی۔
یہی وجہ ہے کہ سال کے پہلے ہفتے میں بالی ووڈ اور باکس آفس ہلچل نہیں رہتی۔
اس سال ۲۶؍ جنوری کو جنوری کو سینیما گھروں پر شاہ رخ خان کی ’رئیس‘ اور رہتک روشن ’قابل‘ ایک ساتھ ہلچل مچانے آ رہی ہیں ، دیکھنا یہ ہے کہ کیا یہ فلمیں  رکارڈ توڑ سکتی ہیں ؟

Please follow and like us:
0

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com