بھیونڈی میں بیسویں کل ہند اردو کتاب میلہ کا شاندار افتتاح

کوئی سماج تعلیم کے بغیر ترقی نہیں کر سکتا ملک کی ترقی کے لیے تمام طبقات کا تعلیم یافتہ ہو نا ضروری ہے۔پر کاش جاوڈیکر
بھیونڈی ۱۷؍دسمبر ۲۰۱۶:قومی کونسل برائے فروغ ِ اردو زبان اور کو کن مسلم ایجوکیشن سوسائٹی کے زیر اہتمام منعقد ہو نے والیکل ہند اردوکتاب میلے کا آج یہاں رئیس ہائی اسکول اینڈ جو نیئر کا لج بھیونڈی کے میدان میںمر کزی کابینی وزیر برائے فروغ انسانی وسائل جناب پرکاش جاوڈیکر کے ہاتھوں عمل میں آیا۔اس موقع پر دن کے ساڑھے گیارہ بجے میلہ گرائونڈ میں ایک بڑے اسٹیج پر شہر کے معززین سمیت اردو زبان اور اس کے فروغ کے لیے مسلسل جد وجہد کر نے والی تنظیموں ، اسکولوںکے ذمہ داران اور سیاسی و سماجی شخصیات موجود تھیں۔ اس موقع پر شری جاوڈیکر نے کہا کو ئی سماج تعلیم کے بغیر ترقی نہیں کر سکتا ۔ اگر سماج ترقی کرے گا تو ملک بھی تر قی کرے گا ۔ انھوں نے اردو زبان اور اس کی شیرنی کا ذکر کرتے ہو ئے کہا کہ مسلمانوں میں تعلیمی بیداری کی اشد ضرورت ہیں ۔کیوں کہ کسی بھی معاشرہ یا ملک کی تر قی کا مطلب ہو تا ہے تمام طبقات ، تمام مذاہب او ر تمام ریاستوں کی عوام کی مکمل ترقی ۔مجھے اطمینان ہے کہ ہمارے مہاراشٹر سمیت جنو بی کئی ریاستوں میں مسلمانوں کا تعلیمی گراف کا فی اطمینان بخش ہے لیکن ابھی بھی اتر پردیش ، بہار ، بنگال ، آسام جیسی کئی ریاستوں میں مسلمانوں کی تعلیمی اور اقتصادی صورت حال نہایت تشویش ناک ہے جس پر ہماری حکومت اور ہمارے وزیر اعظم بطور خاص غور کررہے ہیں ، اور بہت جلد ایک مضبوط تعلیمی ڈھانچہ ہم پیش کرنے والے ہیں جس سے تما م سرکاری اسکولوں کے بچے اعلی تعلیم کے مدارج حسب منشا پو رے کر پائیں گے۔ وزیرِموصوف نے قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان کے دو برسوں کار کر دگی کا نہایت تفصیل سے ذکر کرتے ہو ئے اس کے حسن کارکردگی کی ستائش کی اور یہ بھی کہا کہ مجھے ذاتی طور پر اردو سیکھنے کا ارمان ہے اور بہت جلد میں اس زبان کو سیکھ کر آپ کے درمیان آنا چاہتا ہوں انہوں نے تعلیمی ماحول کے قیام کے لیے عوامی پہل کو بے حد اہم قرار دیا ۔سب کو شکھسا اور اچھی شکھسا کے نعرے کو بار بار دھرایا اور پو رے ملک کے تعلیمی نظام میں اسے داخل کر کے نافذ کر نے کے اپنے ارادے کا اظہار بھی کیا۔
اردو میلے کی اس افتتاحی کے تقریب میںقومی کونسل برائے فروغ ِ اردو زبان کے ڈائریکٹر پرفیسر ارتضیٰ کریم نے خیر مقدی کلما ت پیش کر تے ہوئے کہا کہ قومی کو نسل کا یہ بیسواںمیلہ ایک تاریخی میلہ یوں ثابت ہو نے جارہا ہے کہ اس میلہ کی تیاری کو کن مسلم ایجوکیشن سوسائٹی اور بھیونڈی و اطراف کے تمام اردو تنظیموں نے مسلسل تیں مہینوں سے تیاریاں کی ہیں اور آج اس کا نمونہ دیکھنے کو مل رہاہے ۔ڈائریکٹر قومی کونسل نے جہاں اسٹیج پر بیٹھے وزیر ، ممبر آف پارلمنٹ، ایم ایل ایزاور کونسلر حضرات کا شکریہ ادا کیا وہیں بچوں کے ذریعہ نکالی گئی متعدد ریلیوں کاذکر کرتے ہوئے ان کے مہتمم حضرات کا بھی شکریہ ادا کیا۔ انھوں نے حکومت کے بھر پور تعاون اور وزیر ِ محترم جناب پر کاش جاوڑیکر کی سر پرستی کے حوالے سے کئی باتیں بتائیں۔ اور یہ بھی کہا کہ اگر یوں ہی وزیر محترم کا تعاون ہمیں حاصل ہو تا رہا تو بہت جلد قومی کونسل ملک میں اپنی نئی تاریخ رقم کرے گی۔افتتاحی تقریب میں موجود تمام مہمانوں نے بھی نہایت جوش و جذبے کے ساتھ اس میلہ کہ اانعقاد کوایک اہم اور تاریخی کارنامہ قرا ر دیا ۔ پی اے انعام دار، کپل پاٹل ،ظہیر قاضی اور ابو عاصم اعظمی نے جلسے سے خطاب کیا ۔
اردو کتاب میلہ کا آغاز کارواں اردو کی شکل میں ہوا اس کا آغاز طلبہ کے تلاوت ِ کلام پاک سے ہوا انجم اسلام کے صدر ڈاکٹر ظہیر قاضی نے افتتاحی کلمات ادا کیے جب کہ جناب ابو عاصم اعظمی نے شکریہ ادا کیا اس کے بعد یہ کارواں مولانا ظفر حسان ندوی، پی اے انعام دار ، علی ایم شمسی ،عرفان جعفری ، عبید اعظم اعظمی ، امتیاز خلیل اور مخلص مدعو کے قیادت میں اردو میلے کی سمت روانہ ہوا ۔اس میں اردو اسکولوں کے طلبہ اساتذہ اور عوام کی ایک بڑی تعدا د نے جوش و خروش کے ساتھ شرکت کی ۔ جگہ جگہ لوگوں نے اس کارواں کا استقبال بڑی گرم جوشی کے ساتھ کیا ۔
وزیر موصوف کے ساتھ دیگر مہمانان کپل پاٹل (ایم ۔پی) مہیش چوگلے ( ایم ایل اے)پی اے انعامدار ، منور پیر بھائی ، رام ناتھ دادا موتے ،( ٹیچرس ایم ایل سی)سابق ایم ایل اے عبدالرشید طاہر مومن عرفان بھورے ،سابق میئر جاوید دلوی ،سنتوش شیٹی ،شعیب گڈو ، عبدالسلام نعمانی، ڈاکٹر مصدق پٹیل ، او ر سوسائٹی کے دیگر عہدے داران و اراکین، شہر کے معززین اساتذہ اور طلبہ اور شہری بڑی تعدادمیں شریک ہو ئے ۔اس تقریب میں صحافیوںکی بڑی تعداد بھی شریک ہو ئی جس میںسرفراز آرزو سعید احمد ، قطب الدین، شاہد اورظہیر خان قابل ِ ذکر ہیں۔ جلسے کے اختتام پر وزیر موصوف نے رئیس ہائی اسکول اینڈ جو نیئر کالج کی نئی تعمیر شدہ تیسری منزل کا افتتاح فرمایا جس میں عہدے داران و اراکین سوسائیٹی، چیئر مین شفیع مقری ،پرنسپل ضیاء الرحمن انصاری، عبدالعزیز انصاری ، مخلص مدعو عامر صدیقی ، ملک مومن ، اساتذہ اور دیگر معززین شریک ہوئے۔
اردو کتاب میلے کی افتتاحی تقریب کا آغاز رفیع الدین فقیہ ہائی اسکول کی طلبہ کے تلاوت کلام پا ک سے ہوا ۔ اس کے بعد مومن ہائی اسکول کی طالبات نے شاعر مشرق علامہ اقبال کا تحریر کردہ ترانہ سارے جہاں سے اچھا ہندوستا ں ہمارا کو ترنگوں کے رنگوں والے شاندار ملبوسات میں پیش کیا جس کولوگوں نے تالیاں بجا کر اپنی پسندیدگی کا اظہار کیا ۔
 عزت مآب وزیر پر کاش جاوڈیکر کا استقبال جناب ارتضٰی ٰ کریم نے شال ، میمنٹو اور گلہائے تحسین پیش کیے۔ اس کے بعد قو می کونسل کے ڈائر یکٹر جناب ارتضی کریم کا اسقبال صدر سوسائٹی جناب اسلم فقیہ نے کیا ۔ افتتاحی تقریب میں شریک تمام مہمانوں کا استقبال گلہائے تحسین پیش کر کے کیا گیا۔پروگرام کی کامیاب نظامت جناب مخلص مدعو اور امیتاز خلیل نے مشترکہ طور پر انجام دی۔ جب کہ ڈاکٹر مصدق پٹیل نے تمام شرکہ کا شکریہ ادا کیا۔
Please follow and like us:
0

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com