نیند کیوں رات بھر نہیں آتی ؟

نیند کیوں رات بھر نہیں آتی ؟

اگر نیند نہیں آنے کی کسی کو شکایت نہیں ہوتی ، تو شاعر نے یہ شعر نہیں کہا ہوتا
موت کا ایک دن معین ہے ؍ نیند کیوں رات بھر نہیں آتی
بہر حال ہر جاندار کے لیے نیند بے حد اہم ہے ، مگر نیند کے بھی کچھ جدا انداز ہیں ، کبھی تو یہ کہیں بھی آ جاتی ہے ، یعنی پتھر پر بھی اور کبھی یہ نرم بستر پر بھی نہیں آتی ۔ نیند نہیں آنے کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں اور اسے بلانے کے کئی طریقے ہوتے ہیں ، آج ہم اسی موضوع پر گفتگو کریں گے ، تاکہ جنہیں نیند نہیں آنے کی شکایت ہے ، ان کا مسئلہ حل ہو جائے ۔جن لوگوں پر وقت بے وقت نیند غالب آتی ہے ، وہ اسے بھگانے کے کئی جتن کرتے ہیں ، مثلاً چائے یا کافی پیتے ہیں یا سگریٹ نوشی کا سہارا لیتے ہیں ، سگریٹ نوشی کا سہارا وہ لوگ بھی لیتے ہیں ، جنہیں نیند نہیں آتی ۔ قدرت کے نظام کے مطابق رات آرام کے لیے بنائی گئی ہے، اسی لیے رات ہوتے ہی نیند آ جاتی ہے ، بستیاں خاموش ہو جاتی ہیں ، مگر ان ہی خاموش بستیوں میں کئی لوگ ایسے بھی ہوتے ہیں ، جو الوؤں کی طرح جاگتے ہیں ۔ الو کیوں جاگتے ہیں اس تعلق سے پرندوں کے ماہرین ہی بتا سکتے ہیں ، مگر انسان کیوں جاگتے ہیں ، یہ مسئلہ ابھی تحقیق طلب ہے ۔ نیند کا نہیں آنا یا کم آنا بھی ایک مرض ہے ، مگر جو لوگ اس مرض میں مبتلا ہوتے ہیں ، ان کی مشکلات سے وہی واقف ہوتے ہیں ، اسے کوئی اور نہیں سمجھ سکتا۔ ایسے میں مخلص اور ہمدرد دوست بہت اچھے مشورے بھی دیتے ہیں ۔ ملاحظہ فرمائیں مشورے اور ان کے نتائج ۔
ایک بار نیند ہماری آنکھوں سے اس طرح روٹھ کر چلی گئی کہ کئی جتن کرنے کے باوجود لوٹ کر نہیں آئی ۔ مشکل سے دو یا تین گھنٹے کی نیند ملتی تھی ا ور پھر رات آنکھوں میں کٹتی تھی ۔ کسی نے مشورہ دیا ، ارے یہ کون سی مشکل ہے ، تھوڑی سی خشخاش پیس کر اس کا لیپ سر پر لگا دیں اور بستر پر لیٹ جائیں ، تھوڑی ہی دیر میں نیند آ جائے گی ۔ اس مشورے پر عمل کرنے سے نیند تو نہیں آئی ، البتہ بے چینی اس قدر بڑھ گئی کہ جی چاہا فوراً سردھو دیا جائے ، تاکہ خشخاش کے لیپ سے نجات حاصل ہو جائے اور آرام محسوس ہو ۔ اپنے لمبے گھنے بالوں سے خشخاش کا لیپ صاف کرنے کی کوشش میںپانی کافی خرچ ہو گیا اور وقت اتنا گزر گیا کہ پرندے صبح کی آمد کا اعلان کرنے لگے ۔ شب بیداری اور لیپ لگانے سے دھونے کے عمل میں ہونے والی دشواریوں سے سر میں درد ہونے لگا، جس کی وجہ سے رات کا آرام تو غارت ہو ہی گیا ، دن کا چین بھی غارت ہو گیا ، نیند دو تین گھنٹے نیند کے لیے آتی تھی ، وہ بھی نہیں آ سکی ۔ گھر میں کسی نے مشورہ دیا ، قرآن پڑھنا شروع کر دیں ، نیند آ جائے گی ۔پھر یہ ہوا کہ ہماری پڑوسن کو علم ہوا ، تو مشورہ دیا کہ جائفل گھس کر پیشانی پر لگائیںاور دودھ میں جائفل اور شکر ملا کر پی لیا کریں ، بڑی مشکل سے جائفل ملا ہوا دودھ پیا گیا اور پیشانی پرلگانے کا نتیجہ یہ ہوا کہ ، اس کی مہک ہی سے نیند دور بھاگ گئی ۔ نیند نہیں آنے سے اتنی پریشانی نہیں ہو رہی تھی ، جس قدر لوگوں کے مخلصانہ مشوروں سے ہو رہی تھی ۔ ایک صاحب نے کہا ، جب انسان تھک جاتا ہے ، تو خود بخود نیند آ جاتی ہے ، آپ کی مصروفیت کم ہو گی ، تو آپ ایسا کیجیے شام میں دو کلو میٹر پیدل چلیے ، رات میں کھانہ کم کھائیں ، اس کے بعد چہل قدمی کریں ، ان کے مشورے سے ہمارے اوسان خطا ہو رہے تھے ۔ ہم نے ہاں میں ہاں ملائی اور خاموشی اختیار کر لی ۔ ایک اور کرم فرماں نے کہا رات میں دہی چاول کھائیں اور اس کے ساتھ کچی پیاز کھا لیں فوراً عنودگی کا احساس ہوگا اور نیند آ جائے گی ۔ ان کے مشورے پر عمل کرنے کا نتیجہ یہ ہوا کچی پیاز کی مہک نے بے چینی میں مبتلا کر دیا ، نیند پھر بھی نہیں آئی ۔ کسی نے کہا ٹی وی پر کوئی بور کرنے والا پروگرام دیکھیں ، رفتہ رفتہ خواتین کی پسند کے رونے دھونے والے تمام پروگرام دیکھ لیے ، جس سے سر درد ضرور ہوا ، مگر نیند نہیں آئی ۔
ہماری اس کیفیت کا علم ایک اور صاحب کو ہوا ، انہیں بھی تشویش ہونے لگی ۔ انہیں ہم نے ماضی کے تمام تجربات بتا دیے کہ نیند کو بلانے کے لیے ہم نے کیا کیا جتن کر ڈالے ۔ سب سن کر انہوں نے کہا ’’ آپ نے نیند کو ٹھیک سے بلایا نہیں ہوگا ، ورنہ اس کی مجال ، جو وہ نہیں آتی ۔ اسے بھی منانا ہوگا ، آرزو منت کرنا ہوگی ، کسی کو بلانے کے جو جتن ہوتے ہیں ایسے ہی سو سو جتن کرنا ہوں گے ، کیسے نہیں آئے گی ، آپ نے بلایا نہیں ہوگا ؟ کہیں آ پ نے اپنی انا کا مسئلہ تو نہیں بنا لیا ؟ دیکھیے آپ اپنے پسندیدہ اور آرام دہ بستر پر لیٹ جائیں اور پھر آنکھوں کو بند کر کے نیند کو بلائیے ، بڑے پیار سے ، ادب سے اور محبت سے بلائیے اور پھر دیکھیے وہ کیسے نہیں آتی ، وہ کیا اس کے اچھے بھی آ جائیں گے ۔ نیند کوئی آپ کے گھر کی ملازمہ ہے ، جسے نہیں آنے پر ڈانٹ دیا تو دوسرے ہی دن سے وقت پر آنا شروع کر دے گی ؟ نہ ، نہ نیند بہت اہم اور انسانی زندگی کے لیے لازم ہے ، آپ اسے بلانے سے قبل پورا اہتمام کیجیے ، اسے بلانے کے بھی کچھ آداب ہیں ۔ آپ نیند کو اہتمام کے ساتھ بلائیے وہ آ جائے گی ۔
سب کے مشورے سن لیے عمل بھی کر لیا ،نیند ایسی روٹھی ہے کہ آتی ہی نہیں ، تو سوچا اسے خوش کرنے یا منانے کے لیے ایک مضمون ہی لکھ دیا جائے ، تاکہ وہ شکریہ ہی ادا کرنے ہماری آنکھوں میں چلی آئے اور ایک بار جو آ جائے نا ، تو ہم اپنی آنکھوں میں اسے اس طرح بھینچ لیں گے کہ ہماری گرفت سے بھاگنے نہ پائے!بس ایک بار آ تو جائے!!

٭شیریں دلوی

Please follow and like us:
0

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com